چا ہتو ں کا رنگ ہے۔۔۔۔  یہ جو نشا ن پتنگ ہے۔

 مہا جر وں کے سنگ ہے،افق افق پتنگ ہے
عر و ج کی اُمنگ ہے ، پتنگ پھر پتنگ ہے
بلند یو ں پر ہے نظر محبتو ں کے ر نگ ہے
صر ف میر ا قا ئدہی امید کی کر ن ہے

چا ہتو ں کا رنگ ہے۔۔۔۔ یہ جو نشا ن پتنگ ہے۔
عجیب شوخ و رنگ ہے، فتح بھی سنگ سنگ ہے
سنہری رنگ ڈھنگ ہے ، نفس نفس تر نگ ہے
ہے نعر ہ حق پر ر ستی جسے دیکھ کر، ہر کو ئی دنگ ہے
ہے ڈور جس کے ہا تھ میں، وہ قا ئد بھی دبنگ ہے

چا ہتو ں کا رنگ ہے۔۔۔۔ یہ جو نشا ن پتنگ ہے
جس سے با طلو ں کو ڈر ہے، ہا ں یہ وہ ہی پتنگ  ہے
وہ کہہ رہے ہیں رات دن ،کہ یہ رنگ میں بھنگ ہے
سنو اے نیا زی !یہ ہے کر اچی، یہاں تیر ی نہیں با زی
نہ یہ تھا کبھی غلا م ،نہ چا ہیے اس کو آزاد ی

Point.[1]

چا ہتو ں کا رنگ ہے۔۔۔ یہ جو نشا ن پتنگ ہے
یاد رکھو ما ضی یہا ں اُڑ تی صر ف پتنگ ہے
جس کی پر واز بلندیوں کے سنگ ہے
حق و با طل کا فر ق ہے یہ جو نشا ن پتنگ ہے
یہ بتا ئے گا  الیکشن کا دن عو ام کس کے سنگ ہے۔
چا ہتو ں کا رنگ ہے۔۔۔۔ یہ جو نشا ن پتنگ ہے

Advertisements