10314535_679992422081905_8161987663283958024_n  images

پاکستان کے وجود میں آنے کی ایک سب سے بڑی وجہ یہ تھی کہ ہندوستان میں موجود مسلمانوں کے اندر بے چینی اور احساس محرومی تھی جس کی وجہ سے تحریکیں چلیں  اپنے حقوق کے لیے تمام مسلمان یکجا ہوۓ اور اپنی آواز بلند کی اور پھر مسلمانوں کی بھر پور جدوجہد کامیاب ہوئ . 20 لاکھ سے زائد جانوں کے نذرانے دینے اور طویل جدوجہد اور قربانیوں کے بعد وہ وقت بھی آن پہنچا کہ  14 اگست 1947 کو پاکستان معرض وجود میں آیا. مگر افسوس صد افسوس کہ  آزادی کے لیے جدوجہد کرنے والے  اور انکی اولادیں آج آزاد ملک حاصل کرنے کے بعد بھی اپنے حقوق سے محروم ہیں اور اب بانیان پاکستان کی اولادیں اپنی آنے والی نسلوں کی بقا کے لیے پچھلے 36 سالوں سے جدوجہد کررہی ہیں .
پاکستان کے قیام سے لیکر اج تک کبھی کسی نے اردو بولنے والے سندھیوں کے بڑھتے ہوۓ احساس محرومیوں پر کان نہیں دھرے اور آج بھی مہاجروں یعنی اردو بولنے والے شہری سندھ کے عوام اپنے بنیادی حقوق سے محروم ہیں اور مہاجروں کے لیے بانیان پاکستان کے سپوت  الطاف حسین  نے حقوق سے  محروم  مظلوم قوم کے لیے آواز بلند کی تو ان  پر اور انکی تحریک پر بیش بہا الزامات لگاے گئے اور دیگر قومیت اور صوبوں میں الطاف حسین اور ایم کیوایم  کے خلاف ہمارے حکمرانوں نے بھرپور زہر افشائ کی اور سندھ کے شہری علاقوں میں ہونے والے مہاجروں پرظلم کو دیگر صوبوں میں غلط رنگ دے کر اردو بولنے والوں سے اور دور کردیا گیا.
آج سندھ پنجاب پختونخواہ  اور بلوچستان کے باشعور عوام اور نئ نوجوان نسل کو مہاجروں کے احساس محرومی اور سقوط ڈھاکہ  پر تحقیق کرنا چاہیے
اس میں کسی بھی پاکستانی کی دو راۓ نہیں ہونی چاہیے ( آیا وہ سندھی ہو  پنجابی ہو سرائیکی ہو پختون ہو بلوچی ہو ) کہ پاکستان کے قیام میں سب سے مثالی جدوجہد مہاجروں یعنی اردو بولنے والوں نے کی .
مگر پھر بھی انھیں آج تک پاکستان میں برابری کا درجہ کیوں نہیں  دیا جاتا ؟
سندھ اور پورے پاکستان کو پالنے والے کراچی کو اسکے عوام کو اسکے بنیادی حقوق کیوں نہیں دیے جاتے ؟ اسلیے کہ کراچی ایک باشعور طبقے کا شہر ہے جو جاگیردار وڈیروں سرمایہ داروں اور صنعتکاروں کی غلامی 25 سال پہلے ٹھکرا چکا ہے اسلئے کراچی کے باسیوں کو انکے حقوق نہیں دیے جاتے؟
جناب میں آپ سے مخاطب ہوں پاکستان ؟؟ میرا سوال ہر اس محب وطن پاکستانی سے ہے جو انسانیت پر یقین رکھتا ہو، کیا آپ  اپنے گھر کا اختیار اپنے کسی پڑوسی کو دے سکتے ہیں؟ اگر نہیں تو کیوں ؟ اسی طرح شہری سندھ پر دیہی سندھ کیوں اپنی مرضی مسلط کرنا چاہتا ہے ؟ کیا آپ اپنے پڑوسی پر ظلم جبر کے زریعے اسکے گھر پر قابض ہونگے ؟  اگر آپ ظلم جبر کرتے رہے گے تو ایک دن وہ کھل کر آپکے سامنے کھڑا ہوجائے گا کیوں کہ روز روز کے ظلم سہنے سے بہتر ہے کہ ایک بار آمنے سامنے لڑ لیا جاے اسکے بعد یا تو پھر ظالم بچے گا یا پھر مظلوم.
باشعور طبقہ خاص طور سے طالب علم کو اس پر غوروخوص کرنا چاہیے اور الطاف حسین اور ایم کیو ایم کی جدوجہد کو دیکھنا چاہیے کالطاف حسین صاحب نے  اپنی تحریک مہاجر قومی موومینٹ کو متحدہ میں تبدیل کردیا اور تمام مظلوم عوام کے لیے نہ صرف آواز اٹھائی بلکہ ہر ممکن تعاون کیا اسکے باوجود انکے ساتھ اور اردو بولنے والوں کے ساتھ دوہرا معیار کیوں؟ کیا اسکی صرف یہ وجہ ہے کہ وہ بانیان پاکستان کی اولادوں میں سے ہیں ؟ اس احساس محرومی ختم نہ کیا گیا تو بہت برے نتائج بھی ہوسکتے ہیں خدارا ھمارے حکمرانوں کو چاہیے کہ تعصب کی عینک کو اتار کر اردو بولنے والوں کی شکایات سنیں .اور میری نظر میں مہاجر ہونا کوئی جرم نہیں بلکہ یہ میرے لیے  اعزاز کی  بات ہے میرے پیارے آقا نے بھی ہجرت کی تھی اور میرے اجداد نے بھی یہ سنت ادا کی

Advertisements