imagesGen-Zia-with-Bhutto55

imagesyyyyy

جنرل ضیاء الحق اور زولفقار علی بھٹو کےسول مارشل لا بھی غداری تھی یا صرف مشرف کا مارشل لا غداری تھی؟

 ماضی کے ادوار کے دو سوال جو شائد موجودہ حکمران اور نئ نسل کے ٹیوٹر رہنما اپنے اجداد کے کیے کارنامے بھول گئے ہیں انکی یاداشت کے لئے اور  اختر بہوپالی کے قالم سے دو سوالوں کو مزید بہتر انداز میں کرنے کے لیے عرض ہے کہ بتایے کہ
سوال نمبر1. فیلڈ مارشل محمد ایوب خان کو ڈیڈی کہنے والے آٹھ سال تک لاڈلے اور وزیر خارجہ کون بنے رہے ؟
سوال نمبر 2.جنرل ضیاء کے اس چہیتے کا نام بتائیں جسے چیف مارشل لا ایڈ منسٹریٹر نے پہلے وزیر تعلیم پھر وزیرخزانہ اور بعد میں وزیراعلیٰ پنجاب بنایا؟  ان دونوں سوالوں کے جواب کے بعد دو بڑی جماعتوں کے وزراء ، مشیر ، اور نو نہال ٹیوٹر کے رہنماوں کے منہ پر تالے لگ جاینگے اور ان سوالوں کے جواب میرے لیے اور نئ نسل کے لیے بہت ضرروری ہے نئ نسل کو پتہ ہونا چاہیے کہ موجودہ رہنما جو جنرل  مشرف کو غدار  اور آیئن شکن کہہ رہے وہ بھی مارشل لا کے نفاز کی وجہ سے تو تمام پاکستانیوں کویاد رکھنا چاہیے کہ پہلے بھی پاکستان میں مارشل لا لگے ہیں اس ادوار اور حقیفت کا بھی پاکستان کی قوم کو یاد رکھنا چاہیے  کہ جب مارشل لا لگانا  آیئن شکنی اور غداری ہے تو صرف مشرف ہی کیوں غدار ٹھیرے جناب ؟  اپنی نئ و پرانی نسل کے لیے عرض ہے کہ جو اٹھ سال تک  جنرل آیوب خان کو ڈیڈی ڈیڈی کہنے والے کو اور لاڈلے  اور سابقہ وزیر خارجہ اور کوئ نہیں پیپلز پارٹی کے شہید رہنما اور بلاول زرداری عرف بلاول بھٹو کے نانا جناب زولفقار علی بھٹو ہیں جو جنرل ایوب کے دور اقتدار میں وزیر خارجہ رہے اور جنرل آیوب کے تعارف کرانے کے بعد جناب زولفقار علی بھٹو وزیراعظم بنے مگر افسوس جس طرح وہ وزیراعظم بنے اسی طرح انھیں اقتدار سے اتار دیا گیا یادرہے زولفقار علی بھٹو کے ادوار میں انتیخابات میں انتیہا کی دھاندلی ہوئ تھی جس کا اعتراف خود زولفقار علی بھٹو نے بھی کیا تھا بعد میں انکی حکومت کی دھاندلی کے خلاف جب تحاریک چلنے لگی تو اس کو دبانے کے لیے اس  وقت کے وزیراعظم زولفقار علی بھٹو نے پاکستان کے 3 بڑے شہروں کراچی  حیدرآباد  اور لاہور میں جزوی طور پر مارشل لا نافذ کیا تھا کیا اس وقت  آیئن میں مارشل لا یا پھر ایمر جنسی کی گنجائش تھی؟ تو پھر ایمر جنسی یا پھر مارشل لا لگانا آ ئین شکنی اور غداری ہے تو زولفقار علی بھٹو شہید نہیں غدار تھے اور ہم ہر سال ایک  آ ئین شکن غدار کی برسی کیوں  مناتے ہیں؟ خدارا جنرل مشرف کے ساتھ تعصب کے عینک کو اتار کر اسے باعزت طریقے سے رہنے دیں.
اور دسرا سوال2 ؛ جنرل ضیاء الحق کے ادوار میں چیف مارشل لا ایڈمنسٹریٹر کے دور میں وزیر تعلیم، وزیرخزانہ اور پھر پنجاب کے وزیراعلی بننے والے ضیاء الحق کے چہیتے اور کوئ نہیں ہمارے موجودہ وزیراعظم میاں نواز شریف ہیں جو 2014 میں تیسری مرتبہ وزیراعظم بنے ہیں وہ شائد بھول گئے کہ وہ بھی اس مارشل لا کی پیداوار ہیں پہلے نوازشریف صاحب کو گلی کا آوارہ کتا بھی نہیں جانتا تھا اور نہ ہی کوئ انکا اتنا بڑا کاروبار تھا مگر جب ضیاء الحق نے بھٹو پر مقدمہ کے بعد دور اقتدار سے ہٹایا اور پاکستان میں پھر مارشل لا لگایا تو اس وقت ضیاالحق کا ساتھ دینے والے اور وزارتیں لینے والے اور کوئ نہیں ہمارے موجودہ وزیراعظم نوازشریف تھے  اور اس ایمر  جنسی کے زریعے اقتدار میں آنے والے آئین شکنی باتیں کر رہے ہیں جب ملک میں سولین مارشل لا تم نے اور تمہارے اقاوں اور سیاسی باپوں نے لگاے تو اس وقت یہ غداری نہیں تھی ؟ اگر یہ آیئن توڑنا اور ایمرجنسی لگانا غداری ہے تو نواز شریف یا پھر انکے چمچے میڈیا پر آکر اعلان کریں کہ جنرل ضیاالحق ، زولفقار علی بھٹو ،جنرل آیوب اور انکے مارشل لا میں ساتھ دینے والے تمام آیئن شکنی کے مرتکب تھے اور سب غداری کے زمرے میں آتے ہیں آگر یہ نہیں کرسکتے تو پھر مشرف کے خلاف متعصب کاروائ بند کردیں .اور خواجہ سعد رفیق اور خواجہ آصف تم لوگ بھول گئے سالوں  پہلے تم مشرف سے حلف لے چکے ہو اپنی غیرت کو کتنے روپے میں نیلام کیا تم نے ؟ اور تمھارا ماضی گواہ ہے کہ تم بس وزارتوں کے بھوکے ہو اگر  اب بھی ماضی کی طرح کوئ جنرل آجاے تو تم اپنی روایت کو برقرار رکھوگے ..

اور منے بلاول ابھی تم فیڈر پیو سمجھے گدھے پر كتابیں لادنے سے گدھا پڑھنے نہیں لگتا اور سب سے پہلے تم اپنی فنی خرابی ٹھیک کرواؤ اور پھر سب سے پہلے اپنے نانا کی تاریخ پڑھو اور پھر اپنے ماموں نواز شریف کو پڑھنا پھر اپنی والدہ کی تاریخ اور ماضی پڑھنا پھر تمھاری فنی خرابی ٹھیک  ہوجاے تو شادی کر لینا پھر دبئ چلے جانا براے کرم ٹیوٹر پر بے تکے اور بلاوجہ کے ٹیوٹ کرکے دماغ مت خراب کیا کرو خاص طور پر جنرل مشرف کے خلاف کوئ ٹیوٹ مت کیا کرو .پہلے تم اپنے خاندان پر تحقیق کرو .جنرل مشرف غدار کہنے والے اپنے سیاست کے ماضی اور اپنے سیاسی اجداد کو مت بھولیں .

Advertisements