پاکستان کے نام نہاد جمہوری حکمران……اور سیاسی خاندان….

پاکستان ایک ایسا عجیب و غریب ملک ہے جسں میں امیر  امیر ترین اور غریب غریب ترین ہوتا جارہا ہے پاکستان آزادی کے چند سال کے بعد سے لیکر آ ج تک پاکستان پر خاندانی سیاستدانوں  کے ہاتھوں یرغمال ہے .اگر ہم پاکستان کی سیاسی تاریخ پر نگاہ ڈالیں تو پتہ  چلتا ہے کہ جب جب پاکستان میں ان چند خاندانوں  کی نام نہاد  جمہوری  حکومت آئی ہے تب تب اس کا خمیازہ پاکستان کی عوام نے بھگتا ہے .پاکستان کے جمہوری اقتدار میں 2 جماعتیں کئ مرتبہ برسراقتدار رہی مگر افسوس ان جماعتوں کے خاندانوں کو تو کافی حد تک ریلیف ملا مگر جن عام لوگوں کی بدولت وہ اقتدار میں آے ان کو آ ج تک ریلیف نہ مل سکا عام عوام تو دور وہ تو اپنے پارٹی  ورکرز کو بھی ریلیف نہ دے سکے.پاکستان کی 2 سب سے بڑی جماعتیں پاکستان پیپلز پارٹی اور پاکستان مسلم لیگ نواز دونوں جماعتیں اپنے خاندان پر مشتمل ہے عام ورکررز صرف نعرہ لگانے اور جھنڈے لگانے کیلئے ہے جو اپنی جماعت میں جمہوری اقدام نہ کر سکے وہ آ ج جمہوریت  پسندی کے سرٹیفکیٹ دے رہے ہیں.پاکستان جسں میں پہلے ذوالفقار علی بھٹو نے بے نظیر بھٹو کو متعارف کروایا پھر بے نظیر زرداری صاحب کا تحفہ ملا عوام کو اور بلاول بھٹو زرداری  …..اور اسی طرح پاکستان مسلم لیگ نواو کو دیکھیں تو یہ بھی پیچھے نہیں نواز شریف شہباز شریف حمزہ شہباز  مریم نواز اور انکے اعلاوہ انکے داماد بھانجے اور دیگر رشتہ داروں پر مشتمل ہے پاکستان مسلم لیگ نواز اور پاکستان پیپلز پارٹی .یہ پاکستان کیلئے نہیں صرف اپنے  خاندان کیلئے ہیں.یہ صرف ٪2 مراعات یافتہ طبقہ ہے جو 32 خاندانوں پر مشتمل ہے جو پاکستان کی ٪98 فیصد مظلوم محکوم عوام پر قابض ہیں اور پاکستان میں سیاسی و موررثی خاندان کے حکمران کیا جمہوریت کے ٹھیکیدار  دعویدار اور چمپئن ہو سکتے ہیں?
یہ سیاسی خاندان اپنے درمیان خاندانی ریولونگ چیئر گھما رہے ہیں جو ہر صورت میں صرف ان 32 خاندانوں کے گرد گھوم رہی ہے  انکی یہ خاندانی سیاست اسی طرح چلتی رہے گی اگر ہماری عوام اسی طرح شیر اور تیر کے سامنے بے بس بنی رہی تو آ نے والی کئ نسلیں بھی اسی طرح انکی غلام بنی رہے گی اگر ہمیں اپنے آنے والی نسلوں کو ان سے آ زاد کروانہ ہے تو پہلے انکے جھوٹے وعدوں سے نکل کر عملی جدوجہد کرنا ہوگی.اگر پاکستان کی ٪98 فیصد مظلوم محکوم عوام کو اپنی اولادوں کیلئے محفوظ مستقبل چاہیئے تو اسکے لیے ان جاگیردار وڈیروں لٹیروں سرمایہ داروں اور نام نہاد جمہوری ٹھیکیداروں اور سیاسی خاندانوں  کے جال سے نکل کر میدان عمل میں آ نا ہوگا.خدارا اپنی آ نے والی نسلوں کے مسقبل کیلیئے اٹھ کھڑے ھوں….ان خاندانی حکمرانوں سے نجات کیلئے آ گے بڑھیے…اپنے بچوں کے حقوق کیلئے  آ واز بلند کریں..

    

Advertisements